فہرست احادیث

سعد بن ابی وقاص رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ ہم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ مکہ سے مدینہ جانے کے ارادے سے نکلے، ہم عزورا مقام کے قریب تھے کے آپ صلی اللہ علیہ وسلم وہاں اتر گئے۔ آپ نے دونوں ہاتھ اٹھائے اور کچھ دیر اللہ تعالیٰ سے دست بدعا رہے، پھر سجدے میں گر پڑے اور بڑی دیر تک سجدے میں رہے، پھر کھڑے ہوئے اور دونوں ہاتھ اٹھا کر کچھ دیر تک اللہ تعالیٰ سے دعا کی، پھر سجدے میں گر پڑے اور دیر تک سجدے میں رہے۔ آپ ﷺنے ایسا تین مرتبہ کیا اور فرمایا: ”میں نے اپنے رب سے دعا کرتے ہوئے اپنی امت کے لیے سفارش کی، تو اس نے مجھے ایک تہائی امت دے دی، میں اپنے رب کا شکر ادا کرتے ہوئے سجدہ ریز ہوگیا، پھر سر اٹھایا اور اپنی امت کے لیے دعا کی، تو اس نے مجھے اپنی امت کا ایک تہائی اور دے دیا، میں پھر اپنے رب کا شکر ادا کرنے کے لیے سجدہ ریز ہوگیا، پھر میں نے سر اٹھایا اور اپنی امت کے لیے اپنے رب کے سامنے دست سوال دراز کیا، تو اس نے باقی ماندہ ایک تہائی بھی مجھے دے دیا، تو میں اپنے رب کا شکریہ ادا کرنے کے لیے سجدہ ریز ہوگیا“۔ اس حدیث کو امام ابو داود نے روایت کیا ہے۔