عن أبي هريرة رضي الله عنه عن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال: "كَلِمَتَانِ خفيفتان على اللسان، ثقيلتان في الميزان، حبيبتان إلى الرحمن: سبحان الله وبحمده، سبحان الله العظيم".
[صحيح] - [متفق عليه]
المزيــد ...

ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا :”دو کلمے ایسے ہیں جو زبان پر بڑے ہلکے ہیں، میزان میں بڑے وزنی ہیں، رحمٰن کو بڑے محبوب ہیں وہ ”سُبْحَانَ اللَّهِ وَبِحَمْدِهِ، سُبْحَانَ اللَّهِ الْعَظِيمِ“ ہیں“۔
صحیح - متفق علیہ

شرح

رسول اللہ ﷺ نے اس حدیث میں اس بات کی خبر دی ہے کہ ہمارے رب رحمٰن تبارک و تعالیٰ کو دو کلمے بڑے پسند ہیں کہ جن کے حروف بہت کم ہیں لیکن میزان میں بڑے وزنی ہیں اور وہ ”سُبْحَانَ اللَّهِ وَبِحَمْدِهِ، سُبْحَانَ اللَّهِ الْعَظِيمِ“ ہیں۔ کیوں کہ یہ کلمات اللہ تعالیٰ کی تسبیح، اور نقائص سے اس کی پاکی اور ایسی چیز سے مُنزّہ اور مبرّا ہونے کو متضمن ہیں جو اللہ تبارک وتعالیٰ کی جلالتِ شان کے شایانِ شان نہیں۔ اور اس پاکیزگی کی تاکید عظمت کے وصف کے ذریعہ کی گئی ہے۔

ترجمہ: انگریزی زبان فرانسیسی زبان اسپینی ترکی زبان انڈونیشیائی زبان بوسنیائی زبان روسی زبان بنگالی زبان چینی زبان فارسی زبان تجالوج ہندوستانی سنہالی ایغور کردی ہاؤسا پرتگالی مليالم تلگو سواحلی تمل بورمی تھائی جرمنی جاپانی
ترجمہ دیکھیں

فوائد

  1. بغیر تکلف کے مقفی کلام استعمال کرنے کا جواز۔
  2. اللہ عزوجل کے ذکر میں سے ان دو کلموں کی فضیلت کا بیان۔
  3. اللہ عزّوجل کی صفت محبت کا، اس کی شان کے مطابق اثبات۔
  4. اللہ عزّوجل کے لیے رحمٰن کے نام کا اثبات۔
  5. کم کلمات اور زیادہ نیکیوں والے اس ذکر کی ترغیب۔
  6. اذکار کی فضیلت میں کمی بیشی ہے اور اس کے نتیجے میں ثواب میں بھی کمی بیشی ہوتی ہے۔
  7. میزان کا اثبات اور اس کا حق ہونا۔
  8. جو شخص کسی کو کسی عمل کی ترغیب دے، تو اس کے لیے اس کے سامنے اس عمل کے کچھ فوائد کا بتلانا مستحب ہے۔