عن عمر بن الخطاب -رضي الله عنه- قال: قَالَ رَسُولُ الله-صلى الله عليه وسلم-: «إنَّ الله يَنْهَاكُمْ أَن تَحْلِفُوا بِآبَائِكم». وَلمسلم: «فَمَن كان حَالِفا فَلْيَحْلِف بِالله أو لِيَصْمُت». وَفِي رِوَايَةٍ قَالَ عُمَرُ -رضي الله عنه- قال: «فَوَالله ما حَلَفْتُ بِهَا منذ سَمِعْت رَسُولَ الله يَنْهَى عَنْهَا، ذَاكراً وَلا آثِراً».
[صحيح.] - [متفق عليه.]
المزيــد ...

عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: ”یقینا اللہ تعالیٰ تمھیں اس بات سے منع کرتا ہے کہ تم اپنے آباو اجداد کی قسم کھاؤ“۔ صحیح مسلم کی ایک روایت میں یہ الفاظ ہیں:”پس اگر کسی کو قسم ہی کھانی ہے، تو اسے چاہیے کہ وہ اللہ کی قسم کھائے، ورنہ چپ رہے“۔ ایک اور روایت میں عمر رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں:”اللہ کی قسم! نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے ممانعت سننے کے بعد پھر میں نے ان کی (آبا و اجداد کی) کبھی قسم نہیں کھائی؛ نہ اپنی طرف سے اور نہ کسی دوسرے کی جانب سے (بطور نقل)۔

شرح

رسول اللہ ﷺ نے عمر رضی اللہ عنہ کو اپنے والد کی قسم کھاتے سنا، تو انھیں بلند آواز سے پکارتے ہوئے فرمایا: ”یقینا اللہ تعالیٰ تمھیں اس بات سے منع کرتا ہے کہ تم اپنے آباو اجداد کی قسم کھاؤ“۔ چنانچہ صحابۂ کرام رضی اللہ عنھم نے رسول اللہ ﷺ کے اس حکم پر من و عن عمل کیا اور وہ صرف اللہ تعالیٰ ہی کی قسم کھانے لگے، یہاں تک کہ عمر رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ انھوں نے رسول اللہ ﷺ کی جانب سے اس بات کی ممانعت سننے کے بعد دوبارہ کبھی غیر اللہ کی قسم نہ کھائی، نہ ہی جان بوجھ کر اور نہ کسی اور کی جانب سے غیر اللہ کے قسم کو نقل کرتے ہوئے۔

ترجمہ: انگریزی زبان فرانسیسی زبان ہسپانوی زبان ترکی زبان انڈونیشیائی زبان بوسنیائی زبان روسی زبان بنگالی زبان چینی زبان فارسی زبان
ترجمہ دیکھیں