عن عقبة بن عامر -رضي الله عنه- مرفوعاً: "من تَعَلَّقَ تَمِيمَةً فلا أَتَمَّ الله له، ومن تَعَلَّقَ وَدَعَةً فلا وَدَعَ الله له" وفي رواية: "من تَعَلَّقَ تَمِيمَةً فقد أَشْرَكَ".
[الأول: ضعيف. الثاني: صحيح.] - [رواهما أحمد.]
المزيــد ...

عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: ”جس نے تعویذ لٹکایا، اللہ اس کی مراد پوری نہ کرے، اور جس نے سیپ لٹکائی اللہ اسے آرام و سکون نہ دے۔‘‘ اور ایک روایت کے الفاظ یہ ہیں:’’جس نے تعویذ لٹکایا اس نے شرک کیا“۔
صحیح - اسے امام احمد نے روایت کیا ہے۔

شرح

حدیث میں اس بات کا بیان ہے کہ جو شخص تعویذات کو استعمال کرتا ہے اور عقیدہ رکھتا ہے کہ یہ نقصان سے بچاتے ہیں تو وہ نبی ﷺ کی اس کے متعلق کی جانے والی اس بد دعا کی زد میں آتا ہے کہ اللہ تعالی اس کے ارادے کو الٹ دے اور اس کے کام پورے نہ ہوں۔ اسی طرح نبی ﷺ نے سابق الذکر ارادے کے ساتھ سیپ کو استعمال کرنے والے پر بھی بد دعا فرمائی ہے کہ اللہ تعالی اسے راحت و سکون میں نہ رکھے بلکہ ہر تکلیف دہ شے کو اس کے خلاف متحرک کر دے۔ اس دعا سے مقصود اس فعل کے کرنے سے ڈرانا ہے، جیسا کہ نبی ﷺ ایک دوسری حدیث میں فرماتے ہیں کہ یہ عمل اللہ کے ساتھ شرک ہے۔

ترجمہ: انگریزی زبان فرانسیسی زبان اسپینی ترکی زبان انڈونیشیائی زبان بوسنیائی زبان روسی زبان بنگالی زبان چینی زبان فارسی زبان تجالوج ہندوستانی کردی ہاؤسا پرتگالی
ترجمہ دیکھیں