عن عائشة -رضي الله عنها- قالت: ما صَلَّى رسولُ اللهِ -صلى الله عليه وسلم- صلاةً بَعْدَ أَنْ نَزَلَتْ عليه: (إذا جاء نصر الله والفتح) إلا يقول فيها: «سُبْحَانَكَ رَبَّنَا وبِحَمْدِكَ، اللهمَّ اغْفِرْ لِي». وفي رواية: كانَ رسولُ اللهِ -صلى الله عليه وسلم- يُكْثِرُ أَنْ يَقُولَ في رُكُوعِهِ وسُجُودِهِ: «سُبْحَانَكَ اللهُمَّ رَبَّنَا وَبِحَمْدِكَ، اللهُمَّ اغْفِرْ لِي»، يَتَأَوَّلُ القُرْآنَ. وفي رواية: كَانَ رسولُ اللهِ -صلى الله عليه وسلم- يُكْثِرُ أَنْ يَقُولَ قَبْلَ أَنْ يَمُوتَ: «سُبْحَانَكَ اللهُمَّ وَبِحَ‍مْدِكَ أَسْتَغْفِرُكَ وَأَتُوبُ إِلَيْكَ». قالتْ عَائِشَةُ: قلتُ: يا رسولَ اللهِ، ما هذهِ الكلماتُ التي أراكَ أَحْدَثْتَهَا تَقُولُها؟ قال: «جُعِلَتْ لِي عَلَامَةٌ فِي أُمَّتِي إِذَا رَأَيْتُهَا قُلْتُهَا (إذا جاء نصر الله والفتح)... إلى آخر السورة». وفي رواية: كانَ رسولُ الله -صلى الله عليه وسلم- يُكْثِرُ مِنْ قَوْلِ: «سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وَأَتُوبُ إِلَيْهِ». قالتْ: قلتُ: يا رسولَ اللهِ، أراكَ تُكْثِرُ مِنْ قَوْلِ سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وأَتُوبُ إليهِ؟ فقالَ: «أَخْبَرَنِي رَبِّي أَنِّي سَأَرَى عَلَامَةً فِي أُمَّتِي فَإِذَا رَأَيْتُهَا أَكْثَرْتُ مِنْ قَوْلِ: سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وَأَتُوبُ إليهِ فَقَدْ رَأَيْتُهَا: إذا جاء نصر الله والفتح، فَتْحُ مَكَّةَ، ورأيت الناس يدخلون في دين الله أفواجاً، فسبح بحمد ربك واستغفره إنه كان تواباً».
[صحيح.] - [متفق عليه بجميع رواياته.]
المزيــد ...

عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول الله ﷺنے سوره ”إِذَا جَاءَ نَصْرُ اللَّـهِ وَالْفَتْحُ“ کے نزول کے بعد کوئی نماز ایسی نہیں پڑھی جس میں یہ دعا نہ پڑھی ہو: سُبْحَانَكَ رَبَّنَا وبِحَمْدِكَ، اللهمَّ اغْفِرْ لِي (ترجمہ: اے اللہ ہمارے رب! تو پاک ہے اور ہم تیری تعریف کے ساتھ تیری تسبیح بیان کرتے ہیں، اے اللہ تو مجھے بخش دے)۔ ایک اور روایت میں ہے کہ رسول اللہ ﷺ اپنے رکوع و سجود میں کثرت کے ساتھ یہ پڑھا کرتے تھے: سُبْحَانَكَ اللهُمَّ رَبَّنَا وَبِحَمْدِكَ، اللهُمَّ اغْفِرْ لِي۔ آپ ﷺ قرآن (سورہ نصر) کی عملی تفسیر فرما رہے تھے۔ ایک اور روایت میں ہے کہ رسول اللہ ﷺ اپنی وفات سے پہلے کثرت کے ساتھ یہ کہا کرتے تھے: سُبْحَانَكَ اللهُمَّ وَبِحَمْدِكَ أَسْتَغْفِرُكَ وَأَتُوبُ إِلَيْكَ۔ (اے اللہ تو پاک ہے میں تیری تعریف کے ساتھ تیری تسبیح بیان کرتا ہوں، میں تجھ سے بخشش طلب کرتا ہو اور تیرے حضور توبہ کرتا ہوں)۔ عائشہ رضی اللہ کا بیان ہے کہ میں نے پوچھا: یا رسول اللہ! یہ کلمات کیسے ہیں جو میں دیکھتی ہوں کہ آپ نے اب کہنا شروع کیے ہیں؟ آپ ﷺ نے فرمایا: میرے لیے میری امت میں ایک علامت رکھی گئی کہ میں جب اسے دیکھ لوں تو کثرت کے ساتھ یہ پڑھو۔ (اور یہ علامت یہ سورت ہے) إذا جاء نصر الله والفتح۔۔۔الخ۔ ایک اور روایت میں ہے: رسول اللہ کثرت کے ساتھ یہ پڑھا کرتے تھے: سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وَأَتُوبُ إِلَيْهِ۔ عائشہ رضی اللہ عنہا کا بیان ہے کہ میں نے پوچھا کہ یا رسول اللہ! میں آپ کو دیکھتی ہوں کہ آپ کثرت کے ساتھ یہ پڑھتے ہیں: سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وأَتُوبُ إليهِ؟ آپ ﷺ نے فرمایا: میرے رب نے مجھے خبر دی تھی کہ میں عنقریب اپنی امت میں ایک علامت دیکھوں گا اور یہ کہ جب میں اسے دیکھوں تو کثرت کے ساتھ یہ پڑھوں: سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وَأَتُوبُ إليهِ۔ میں نے اس علامت کو دیکھ لیا ہے۔ اور وہ علامت یہ ہے کہ: إذا جاء نصر الله والفتح۔ یعنی جب مکہ فتح ہو جائے۔ وَرَأَيْتَ النَّاسَ يَدْخُلُونَ فِي دِينِ اللَّـهِ أَفْوَاجًا، فَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ وَاسْتَغْفِرْهُ، إِنَّهُ كَانَ تَوَّابًا۔ (اور آپ لوگوں کو اللہ کے دین میں جوق در جوق آتا دیکھ لیں تو اپنے رب کی تسبیح بیان کرنے لگیں حمد کے ساتھ اور اس سے مغفرت کی دعا مانگیں، بے شک وه بڑا ہی توبہ قبول کرنے واﻻ ہے)۔

شرح

عائشہ رضی اللہ عنہا کا بیان ہے سورۃ النصر کے نازل ہونے کے بعد آپ ﷺ ہر نماز کے رکوع و سجود میں یہ فرماتے: سُبْحَانَكَ اللَّهُمَّ وَبِحَمْدِكَ اللَّهُمَّ اغْفِرْ لِي۔ ایسا آپ ﷺ اس حکم کی تعمیل میں کرتے جو آپ ﷺ کو قرآن میں دیا گیا تھا کہ: {فَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ وَاسْتَغْفِرْهُ}. ترجمہ: اپنے رب کی حمد کے ساتھ اس کی پاکیزگی بیان کیجیے۔عائشہ رضی اللہ عنہ بتاتی ہیں کہ انہوں نے نبی ﷺ سے ان کلمات کے بارے میں پوچھا جو آپ ﷺ اپنے رکوع و سجود میں کہنا شروع کیے تھے۔ آپ ﷺ نے انہیں بتایا کہ اللہ تبارک و تعالی نے آپ ﷺ کو بتایا ہے کہ آپ ﷺ عنقریب اپنی امت کے بارے میں ایک علامت ملاحظہ کریں گے۔ جب آپ اس علامت کو دیکھیں تو کثرت کے ساتھ یہ پڑھیں: سُبْحَانَ اللهِ وَبِحَمْدِهِ أَسْتَغْفِرُ اللهَ وَأَتُوبُ إليهِ۔ یہ علامت: ”إِذَا جَاءَ نَصْرُ اللَّـهِ وَالْفَتْحُ -یعنی فتح مکہ ہے- وَرَأَيْتَ النَّاسَ يَدْخُلُونَ فِي دِينِ اللَّـهِ أَفْوَاجًا فَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ وَاسْتَغْفِرْهُ إِنَّهُ كَانَ تَوَّابًا“۔ ترجمہ: جب اللہ کی مدد اور فتح آجائے (یعنی فتحِ مکہ) اور تو لوگوں کو اللہ کے دین میں جوق در جوق آتا دیکھ لے، تو اپنے رب کی تسبیح کرنے میں جُٹ جا حمد کے ساتھ اور اس سے مغفرت کی دعا مانگ، بے شک وه بڑا ہی توبہ قبول کرنے واﻻ ہے۔

ترجمہ: انگریزی زبان فرانسیسی زبان ہسپانوی زبان ترکی زبان انڈونیشیائی زبان بوسنیائی زبان روسی زبان بنگالی زبان چینی زبان فارسی زبان
ترجمہ دیکھیں