عن عقبة بن عامر-رضي الله عنه- مرفوعاً: «مَنْ عُلِّمَ الرَّمْيَ، ثم تَرَكَه، فليس مِنَّا، أو فقد عَصَى».
[صحيح.] - [رواه مسلم.]
المزيــد ...

عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: ”جسے نشانہ بازی سکھائی گئی اور بعدازاں اس نے اسے چھوڑ دیا تو وہ ہم میں سے نہیں، یا اس نے نافرمانی کی“۔
صحیح - اسے امام مسلم نے روایت کیا ہے۔

شرح

حدیث کا مفہوم: جس نے تیراندازی یا پھر جدید آلات جنگ کے ذریعے سے نشانہ بازی سیکھی اور پھر اس نے اسے چھوڑ دیا اور اس سلسلے میں لاپرواہی برتی تو وہ ہم میں سے نہیں ہے۔ یعنی وہ ہمارے طرزِعمل اور ہمارے طریقے پر قائم نہیں ہے۔”یا اس نے نافرمانی کی“۔ راوی کو اس میں شک ہے کہ آپ ﷺ نے ”وہ ہم میں سے نہیں ہے“ کہا تھا یا پھر ”اس نے نافرمانی کی“ کہا تھا۔

ترجمہ: انگریزی زبان فرانسیسی زبان اسپینی ترکی زبان انڈونیشیائی زبان بوسنیائی زبان روسی زبان بنگالی زبان چینی زبان فارسی زبان تجالوج ہندوستانی ویتنامی ایغور ہاؤسا
ترجمہ دیکھیں